مکتوبات شیخ محمد طاہر عباسی نقشبندی، مکتوب ۱ بطرف پیر و مرشد

مکتوبات شریف حضرت مولانا شیخ محمد طاہر عباسی سندھی نقشبندی مجددی مدظلہ العالی، سجادہ نشین درگاہ اللہ آباد شریف، کنڈیارو، سندھ

مکتوب ۱: یہ مکتوب حضرت شیخ محمد طاہر عباسی نقشبندی مجددی المعروف سجن سائیں مدظلہ نے اپنے والد بزرگوار و مرشد مہربان مربی حضرت شیخ اللہ بخش عباسی نقشبندی مجددی المعروف سوہنا سائیں نور اللہ مرقدہ کی خدمت میں ارسال کیا۔

سن تحریر: 1982

سیرت ولی کامل حصہ دوم، مرتب مولانا حبیب الرحمان گبول بخشی

مکتوب شریف نیچے شروع ہوتا ہے:

تاریخ: ۱/۵/۸۲

بسم اللہ الرحمٰن الرحیم

بخدمت جناب حضرت قبلہ سوہنا سائیں دام اقبالکم علینا الیٰ یوم المیزان

السلام علیکم و رحمۃ اللہ!

اللہ تعالیٰ کے فضل و کرم سے یہ بندہ اور جملہ اہل خانہ ہر طرح خیریت سے ہیں، امید ہے کہ حضرت سائیں بھی ہر طرح خیریت سے ہوں گے۔ حضور سائیں کی نظر کرم سے درگاہ شریف کا انتظام ہر طرح سے بہترین چل رہا ہے، اسی طرح مدرسہ کا انتظام بھی بالکل درست ہے۔ حضور سائیں کی مہربانی سے جملہ طلباء تدریسی خواہ انتظامی لحاظ سے بالکل چست ہیں۔

چونکہ اس وقت طلبہ کی پڑھائی نئے تعمیر شدہ مدرسہ میں ہوتی ہے، اس لئے طلبہ پر تعلیمی پابندی کرانے میں آسانی ہے۔ صبح کی نماز کے بعد مختصر وقت لنگر کا کام ہوتا ہے، اس کے بعد طلبہ کی ضروریات کی پیش نظر آدھ گھنٹہ چھٹی دی جاتی ہے جس کے بعد حاضری ہوتی ہے۔ حاضری میں نہ پہنچنے والے نیز باجماعت نماز میں نہ پہنچنے والے طلبہ کو سزا دی جاتی ہے۔ اس کے بعد تعلیم کا آغاز ہوتا ہے، ساتھ ہی مدرسہ کے تمام دروازے بند کر دیئے جاتے ہیں اور مرکزی دروازہ پر ایک آدمی بٹھا دیا جاتا ہے جو بغیر اجازت باہر جانے والے طلبہ کو واپس کرتا ہے، باہر جانے کے لئے ہر ایک طالب علم استاد صاحب سے اجازت لے کر جاتا ہے اور استاد کو ٹائم مقرر کر کے دیتا ہے۔ مقررہ وقت پر نہ پہنچنے والے طالب علم کو سزا دی جاتی ہے۔ اسی طرح کی پابندی لنگر شریف کھانے کے بعد بھی کرائی جاتی ہے۔ اسی طرح شام کو تین بجے کے بعد تعلیم شروع کی جاتی ہے، اور رات کو استاد صاحبان خود بیٹھ کر پابندی سے طلبہ کو مطالعہ کراتے ہیں، اور مطالعہ میں شامل نہ ہونے والے طالب علم کو سبق میں شامل ہونے کی اجازت نہیں دی جاتی۔

مزید قبلہ سائیں اس عاجز اور مولوی محمد داؤد نے یہ مشورہ کیا ہے کہ ہفتے میں ایک ایسا دن مقرر کیا جائے جس میں جماعت کا کوئی تعلیم یافتہ فرد مختلف موضوعات پر طلبہ کو لیکچر دے اور اس پر عمل بھی کیا جائے۔ آئندہ سوموار کے لئے ڈاکٹر عبدالرحیم صاحب کو کہا گیا ہے کہ وہ حفظانِ صحت کے موضوع پر طلبہ کو لیکچر دیں۔ انہوں نے یہ دعوت قبول کر لی ہے۔ اسی طرح بعد میں آنے والے ہفتہ کے لئے کسی اور اہل آدمی کو دعوت دی جائے گی۔

مدرسہ کا انتظام ہر لحاظ سے بہترین چل رہا ہے۔

حضور سائیں کی دعاؤں کی ضرورت ہے۔ یہ دعا فرماویں کہ اللہ سائیں صحیح طرح سے آپ کی غلامی نصیب فرماوے، آمین۔ گھر میں ہر طرح خیریت ہے۔ والدہ صاحبہ کی طبیعت بھی تندرست ہے۔ ننھا محمد طارق، محمد جمیل اور ان کی ہمشیرہ بالکل خوش ہیں۔ تمام ہمشیرائیں پابندی سے قرآن مجید کی تلاوت کرتی ہیں۔ لنگر شریف کا ٹریکٹر پہنچ گیا ہے جسے فی الحال نور محمد شاہ چلا رہا ہے۔ میاں عثمان کی طبیعت اب بالکل ٹھیک ہے، جمعہ کے دن آیا تھا۔
رات کو میاں گل محمد، شفیع محمد، اور میاں محمد عثمان اندر (حویلی میں) سوتے ہیں۔

۹ تاریخ کو ہماری فقیرپور کے لئے تیاری ہے۔ حضور سائیں کی دعا کی ضرورت ہے۔ بندہ کی کوئی حیثیت نہیں ہے، حضور سائیں کی نظر کرم کی ضرورت ہے۔

السلام علیکم اس عاجز اور جملہ اہل خانہ کی طرف سے عرض

ناچیز محمد طاہر بخشی

أضف تعليقاً

لن يتم نشر عنوان بريدك الإلكتروني. الحقول الإلزامية مشار إليها بـ *