نامہ مبارک حضرت امام المرسلین صلی اللہ علیہ وسلم بنام ہِرَقل قیصرِ روم

نامہ مبارک حضرت امام المرسلین سید الانبیاء صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم (وصال مبارک ۱۱ھ)، بنام ہرقل قیصرِ روم

یہ نامہ مبارک آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے سلطنتِ روم کے شہنشاہ ہرقل کی طرف اسلام کی دعوت دینے کے لئے لکھا۔

آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کا یہ نامۂ مبارک اردن کے شاہ حسین کو اپنے دادا سے ملا تھا اور لندن کے ماہرین نے اس کو اصل قرار دیا۔ اس کا عکس مختلف کتبِ سیرت میں شایع ہو چکا ہے۔ ڈاکٹر حمید اللہ صاحب نے ۱۹۵۵ میں اس کی اصل فرانسیسی رسالہ ARABICA میں شائع کرائی تھی۔

زبان: عربی

اردو ترجمہ: سید فضل الرحمٰن

حوالہ: خطوطِ ہادیِ اعظم صلی اللہ علیہ وسلم (اردو)، سید فضل الرحمٰن، زوّار اکیڈمی پبلی کیشنز، کراچی، پاکستان، جولائی ۱۹۹۵

نامہ مبارک کا اردو ترجمہ نیچے شروع ہوتا ہے:


بسم الله الرحمٰن الرحيم

اللہ کے بندے اور اس کے رسول محمد (صلی اللہ علیہ وسلم) کی طرف سے روم کے ہرقل عظیم کی جانب۔ سلام اس پر جو ہدایت کی پیروی کرے۔

اما بعد! میں تمہیں اسلام کے کلمہ کی دعوت دیتا ہوں۔ اسلام لے آؤ، سلامت رہو گے، اللہ تعالیٰ تمہیں دہرا اجر دے گا۔ پس اگر تو نے روگردانی کی تو تیری تمام جاہل رعایا (کے اسلام نہ لانے) کا گناہ بھی تجھ پر ہوگا۔

اور اے اہلِ کتاب! تم ایک ایسی بات کی طرف آؤ جو ہمارے اور تمہارے درمیان یکساں ہے، اور وہ یہ ہے کہ ہم اللہ کے سوا کسی کی عبادت نہ کریں اور نہ کسی کو اس کا شریک ٹھہرائیں، اور ہم اللہ کے سوا آپس میں ایک دوسرے کو اپنا رب نہ بنائیں۔ پھر اگر وہ روگردانی کریں تو آپ کہہ دیجئے کہ تم گواہ رہو کہ ہم مسلمان ہیں۔


عربی متن

بسم اللهِ الرّحمٰنِ الرَّحيمِ. مِن محمدٍ عبدِ اللهِ ورسولهٖ، الىٰ هِرَقلَ عظيم الروم. سلام“ عَلىٰ مَنِ اتَّبع الهُدى. اما بعد: فاِنّي ادعوك بدِعاية الاسلام، اسلِم تَسلَم، تؤتِكَ الله اجرك مرَّتين. فان توليت فعليك اثم الاريسيين. ويا اهل الكتٰب تعالَوا الىٰ كلمةٍ سواءٍ بيننا وبينَكم اَلَّا نعبُد الَّا الله ولا نُشرك بهٖ شيئًا ولا يتَّخِذ بعضُنا بعضًا اربابًا من دون اللهِ، فان تولَّوا فقولوا اشهَدوا بانَّا مُسلِمون.


عکس نامۂ مبارک

نامۂ مبارک بنام یرقل قیصر روم
نامۂ مبارک بنام یرقل قیصر روم

أضف تعليقاً

لن يتم نشر عنوان بريدك الإلكتروني. الحقول الإلزامية مشار إليها بـ *