مکتوب سوہنا سائیں ۱۳: اپنے فرزند حضرت سجن سائیں اور سید عبدالخالق شاہ صاحب کی طرف

مکتوب شریف حضرت شیخ اللہ بخش عباسی نقشبندی مجددی غفاری سندھی اللہ آبادی المعروف پیر سوہنا سائیں (وفات ۱۴۰۴ھ مطابق ۱۹۸۳ء) قدس اللہ سرہ العزیز

حضرت سوہنا سائیں نور اللہ مرقدہ نے 1970ء میں سید عبدالخالق شاہ صاحب رحمۃ اللہ علیہ کی معیت میں صاحبزادہ مولانا محمد طاہر سجن سائیں مدظلہ کو تجوید و قرات قرآن سیکھنے کے لئے مفتی محمود الوری صاحب رحمۃ اللہ علیہ کے مدرسہ رکن الاسلام میں جناب قاری محمد طفیل نقشبندی کی خدمت میں بھیجا، اس وقت حضرت سجن سائیں مدظلہ کی عمر کوئی 7 برس ہوگی، یہ خط آپ کے مذکورہ ایام میں ارسال فرمایا تھا۔

حوالہ: سیرت ولی کامل، حصہ دوم، مصنف مولانا حبیب الرحمان گبول طاہری بخشی

سن تحریر: تقریباً 1970ء

مکتوب شریف نیچے شروع ہوتا ہے۔


بخدمت جناب نور چشمی محمد طاہر و میاں عبدالخالق شاہ صاحب سلمہما اللہ تعالیٰ

السلام علیکم ورحمۃ اللہ و برکاتہ۔ بفضل اللہ تبارک و تعالیٰ یہاں پر ہر طرح کی خیریت ہے، آپ پیاروں کی صحت سلامتی اور عافیت دارین کے لئے یہ فقیر دائماً خواہاں و جویاں ہے۔ آپ کی خیریت، داخلہ اور تعلیم کا احوال پہنچتا رہتا ہے، تعلیم کے لئے آپ حضرات کا شوق اور اخلاق کی پابندی معلوم کرکے بے حد خوشی حاصل ہوئی، دعا ہے کہ حضرت حق سبحانہ و تعالیٰ آپ کو اس مقصد میں پوری کامیابی عطا فرماوے جس کے لئے آپ نے یہ سفر کیا ہے۔ محمد طاہر کو خصوصی نصیحت کی جاتی ہے کہ ہر حال میں استاد کے ادب کا پورا لحاظ رکھیں، حضرت مفتی صاحب جملہ اساتذہ اور اپنے بڑوں کا ادب ملحوظ رکھیں، نشست، برخواست، گفتگو، خواہ تعلیم میں سب سے پہلے آداب کو ملحوظ رکھیں، اور تواضع سے رہیں، گو آپ خود سفر کرنے اور باہر جانے کے قابل نہیں ہیں، الحمدللہ خوشی ہے کہ اس صغر سنی میں بڑی ہمت کی ہے، اپنے مقصد کے حصول کے لئے کوشاں رہیں، جملہ احباب بالخصوص جناب شاہ صاحب کو ان کے متعلق تاکید کی جاتی ہے کہ ان سے ایسا برتاؤ برتیں کہ ان میں ذرہ بھر بد اخلاقی، بے پرواہی جیسے برے اثرات پیدا نہ ہوں، تختی پر خوش خطی کی مشق روزانہ کرتے رہیں، کسی قدر اردو قاعدہ بھی پڑھے تو بہتر ہے، لیکن فرضی اور اصلی کام قرات سیکھنا ہے، امید ہے کہ شاہ صاحب ازخود کافی کوشش کرتے ہونگے۔

جلسہ بخیریت ہو گزرا، لیکن بارش سردی اور سخت ہوا کی وجہ سے جماعت کی حاضری کسی قدر کم رہی۔ اگر کراچی جانا ہوا تو اطلاع کیا جائے گا انشا اللہ تعالیٰ۔ پلی (چنے کی سبزی) بھیجی جا رہی ہے، محمد طاہر اپنے ہاتھوں سے جناب قاری صاحب اور مفتی صاحب کو تحفۃً پیش کریں اور آپ تمام حضرات بھی استعمال کریں، پلی عمدہ اور تقویٰ کا لحاظ رکھتے ہوئے پکائی گئی ہے، الغرض محمد طاہر کے اخلاق کا خاص خیال رکھیں، جلسہ پر آپ نہیں آسکے، اب عید کے موقعہ پر آنا۔ میاں محمد صدیق یا کسی اور طالب کو کسی قسم کی ضرورت درپیش ہو تو تعاون میں سستی ہرگز نہ کرنا۔ اس عاجز بیکار کو خصوصی دعاؤں میں یاد رکھا کریں، جناب حضرت قاری صاحب مدظلہ العالیٰ کی خدمت اقدس میں السلام عرض، نیز دعا کے لئے عرض۔

لاشی فقیر اللہ بخش غفاری

أضف تعليقاً

لن يتم نشر عنوان بريدك الإلكتروني. الحقول الإلزامية مشار إليها بـ *